ہیگ: عالمی عدالت انصاف میں کلبھوشن یادیو کیس کی سماعت کے دوران پاکستانی وکیل خاور قریشی نے پاکستان کی جانب سے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ دہشت گرد کو سزا دینا تمام ممالک کا حق ہے، کلبھوشن کو پاکستان سے گرفتار کیا گیا ہے اس نے پاکستان کی نقصان پہنچانے کا اعتراف کیا ہے، ویانا کنونشن کے تحت پاکستان کی سالمیت کا مسئلہ عالمی عدالت انصاف کے دائرہ اختیار میں نہیں ہے، کلبھوشن کا معاملہ ہنگامی نوعیت کا نہیں، یہ مقدمہ عالمی عدالت انصاف میں نہیں چلایا جا سکتا۔

انہوں نے بھارت کے تمام الزامات مسترد کرکے عالمی عدالت انصاف سے اپیل کی کہ بھارت کی درخواست کو فوری طور پر مسترد کیا جائے۔ انہوں نے عالمی عدالت انصاف کو کہا کہ پاکستان کے خلاف عالمی عدالت انصاف سے رجوع کرکے بھارت اپنے جاسوس کی سزائے موت پر سٹے آرڈر لینا چاہتا ہے۔ملک کے داخلی معاملات میں مداخلت نہیں ہونی چاہئے۔

پاکستان کے وکیل کا کہنا تھا کہ بھارت مسلمان نام سے کلبھوشن کے سرٹیفکیٹ پر کیا کہتا ہے؟بھارت کے پاس کلبھوشن کے بے گناہ ہونے کے کیا ثبوت ہیں؟بھارت مانتا ہے کہ کلبھوشن اس کا شہری ہے۔ بھارتی حکام سے کلبھوشن سے متعلق تفصیلات مانگی گئی تھیں ۔ بھارت نے کلبھوشن کا پاسپورٹ اور پیدائش کا سرٹیفیکیٹ پیش نہیں کیا، بھارت اپنے دلائل میں غلط بیانی سے کام لے رہا ہے۔ بھارت غلط کیس کو لے کر عالمی عدالت انصاف میں آیا ہے ۔ ویانا کنونشن کے تحت عالمی عدالت انصاف کا دائرہ کار محدود ہے۔ عالمی عدالت انصاف سے کلبھوشن کو ریلیف نہیں دیا جا سکتا۔ کلبھوشن کو پاکستان کے صوبے بلوچستان سے گرفتار کیا گیا ہے۔ کلبھوشن کے معاملے کو ہنگامی معاملہ بھارت نے بنا کر پیش کیا پاکستان نے نہیں۔

پاکستانی وکیل خاور قریشی نے کلبھوشن یادیو کے کیس پر عالمی عدالت انصاف کا دائرہ کار چیلنج کرتے ہوئے کہا کہ عالمی عدالت انصاف سے کلبھوشن کو ریلیف نہیں دیا جا سکتا۔ ویانا کنونشن کے تحت عالمی عدالت انصاف کا دائرہ کار محدود ہے۔پاکستان نے ویانا کنونشن معاہدے کی پاسداری کرتے ہوئے ہائی کمیشن سطح پرکلبھوشن کی گرفتاری سے آگاہ کیاتھا۔ جبکہ ویانا کنونشن کے معاہدے میں لکھا ہے کہ ہر ملک گرفتار شخص کا معاملہ میرٹ کے مطابق دیکھے گا۔

کلبھوشن کو قونصلر رسائی کے معاملے پر پاکستانی وکیل کا کہنا تھا کہ کلبھوشن نے پاکستان میں دہشت گردی کرنے کا اعتراف کیا ہے۔ کلبھوشن کو معدنی دولت سے مالا مال بلوچستان سے گرفتار کیا گیا۔ کلبھوشن جعلی پاسپورٹ پر ایران سے پاکستان آیا تھا۔ پاکستان کی جانب سے شرائط عائد کرنے کا بھارتی الزام غلط ہے۔ یادیو ایک دہشت گرد ہے ، جاسوس کلبھوشن کو قونصلر رسائی نہیں دی جا سکتی، بھارتی درخواست میں بہت زیادہ خامیاں ہیں۔ پاکستان نے کل بھوشن کی سرگرمیوں کے ٹھوس شواہد فراہم کیے گئے ۔ بھارتی جاسوس کل بھوشن کو سزائے موت قانون کے مطابق سنائی گئی ہے۔ دہشت گردکو سزا دینا تمام ممالک کی ذمہ داری ہے۔ کلبھوشن کوایران سے اغواکرکے پاکستان لاکراعتراف کرانے کا بھارتی دعوی ٰمضحکہ خیز ہے۔ عالمی عدالت انصاف قراردے چکی قونصلررسائی ریاست کا اپنا معاملہ ہے ۔

Subscribe for our email updates…

Email

Raah Tv Live

About Raah TV

Raah TV is a Pakistani infotainment web channel with a vision to promote positivity, optimism and hope.